40

’ایٹم بم کا استعمال حرام ہے‘.

ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے کہا ہے کہ ایران چاہتا تو بہت پہلے ہی نیوکلیئر بم بنا سکتا تھا لیکن ہم نہیں بنائیں گے کیونکہ اسلام میں اس کا استعمال حرام ہے۔

خامنہ ای نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر ایک ویڈیو جاری کی ہے جس میں وہ علمی شخصیات اور باصلاحیت سائنسدانوں سے گفتگو کررہے ہیں، ان کا کہنا ہے کہ اگرچہ ہم اس (ایٹم بم بنانے کے) راستے پر چل سکتے تھے تاہم اسلامی تعلیمات کے مطابق بہادری اور پختگی کے ساتھ کہتے ہیں کہ ہم اس راستے پر نہیں چلیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایٹم بم کے استعمال کی طرح اس کی تیاری اور ذخیرہ اندوزی بھی غلط ہے، اگر ہمارے پاس ایٹم ہوتا تب بھی یہ ناممکن تھا کہ ہم اسے کہیں بھی استعمال کرتے، اسلامی تعلیمات کے مطابق یقیناً یہ حرام ہے۔

ایران ہمیشہ سے ایٹم بم کی تیاری سے انکار کرتا رہا ہے، تہران کا مؤقف ہے کہ ان کا نیوکلیئر پروگرام صرف پرامن توانائی کے حصول اور طبی مقاصد کیلئے ہے۔

گزشتہ سال مئی میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے 2015ء میں کئی گئی تاریخی ڈیل سے علیحدگی کا اعلان کردیا تھا، جس کے تحت ایران کو نیوکلیئر پروگرام پر پابندیوں میں کچھ نرمی حاصل ہوگئی تھی۔

 

 

 

 

 

 

 

 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں